2012، پاکستان میں دہشت گردی اور دیگر واقعات میں 4500 افراد مارے گئے Reviewed by Momizat on . اسلام آباد (جعفریہ نیوز :5 اپریل) انسانی حقوق کمیشن پاکستان نے کہاہے کہ سال 2012ء میں بھی پاکستان میں انسانی حقوق کی صورتحال بدترین رہی اور پاکستان میں دہشت گرد اسلام آباد (جعفریہ نیوز :5 اپریل) انسانی حقوق کمیشن پاکستان نے کہاہے کہ سال 2012ء میں بھی پاکستان میں انسانی حقوق کی صورتحال بدترین رہی اور پاکستان میں دہشت گرد Rating:
You Are Here: Home » Urdu - اردو » 2012، پاکستان میں دہشت گردی اور دیگر واقعات میں 4500 افراد مارے گئے

2012، پاکستان میں دہشت گردی اور دیگر واقعات میں 4500 افراد مارے گئے

2012، پاکستان میں دہشت گردی اور دیگر واقعات میں 4500 افراد مارے گئے
اسلام آباد (جعفریہ نیوز :5 اپریل) انسانی حقوق کمیشن پاکستان نے کہاہے کہ سال 2012ء میں بھی پاکستان میں انسانی حقوق کی صورتحال بدترین رہی اور پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات ، لسانی، فرقہ وارانہ اور سیاسی تشدد میں 4500/ سے زائد افراد مارے گئے، صرفکراچی میں لسانی، فرقہ وارانہ اور سیاسی تشدد کے باعث 2284 افراد نشانہ بنے، الیکشن کمیشن آف پاکستان اپنے وعدوں کی پاسداری میں ناکام رہا ، یوٹیوب پر پابندی آزادی رائے اور معلومات تک رسائی کے حق کے خلاف ہے۔ جمعرات کے روز اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس میں سالانہ رپورٹ کا اجرا کرتے ہوئے ایچ آر سی پی کے عہدیداران کا کہنا تھا کہ گزشتہ برس مختلف مقدمات میں 242 افراد کو سزائے موت سنائی گئی، حکومت نے قومی کمیشن برائے انسانی حقوق کی تشکیل کے لیے قانون سازی تو کی لیکن اس پر عمل نہ ہو سکا۔ سالانہ رپورٹ کے اہم نکات کے مطابق 2012 میں قبائلی علاقوں پر48ڈرون حملے ہوئے جن میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد کا اندازہ 240سے 400کے درمیان ہے۔ اسی عرصے کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں دہشت گردی کے حملوں میں 2050 افراد ہلاک جبکہ 3822زخمی ہوئے۔ صرف بلوچستان میں ہزارہ برادری کے 100سے زائد افراد کو ہلاک کیا گیا۔کراچی میں گزشتہ برس لسانی، فرقہ وارانہ اور سیاسی تشدد میں کم از کم 2284 افراد مارے گئے۔ اس کے علاوہ فرقہ وارانہ دہشت گردی کے حملوں اور تنازعات کے 213واقعات میں 583افراد ہلاک جبکہ 853زخمی ہوئے۔ رپورٹ میں آزادی اظہارکے باب میں کہا گیا ہے کہ 2012 میں کم از کم 14پاکستان صحافی ہلاک ہوئے۔ پاکستان کا شمار صحافیوں کے لیے خطرناک ترین ممالک میں ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ یو ٹیوب پر حکومتی پابندی کا تذکرہ کرتے ہوئے اسے آزادی رائے اور معلومات تک رسائی کے حق کی شدید خلاف ورزی قرار دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں سیاسی عمل میں شراکت کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن ان حلقوں کے نتائج منسوخ کرنے میں جہاں 10فیصد سے کم خواتین ووٹ ڈالیں گی اور سمندر پار پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کے وعدے کی پاسداری میں ناکام رہا

About The Author

Number of Entries : 6115

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.

© 2013

Scroll to top