اسلامی حجاب پر پابندی کی مخالفت کرنے والے ۸ شیعہ جوانوں کو ۶ سال قید کی سزا Reviewed by Momizat on . جمہوریہ آذربائیجان کی راجدھانی باکو کی عدالت نے آج ان ۸ شیعہ جوانوں کو کال کوٹھری میں چھ سال تک بند کرنے کا فیصلہ سنایا جنہوں نے گزشتہ سال طالبات پر اسلامی حجاب جمہوریہ آذربائیجان کی راجدھانی باکو کی عدالت نے آج ان ۸ شیعہ جوانوں کو کال کوٹھری میں چھ سال تک بند کرنے کا فیصلہ سنایا جنہوں نے گزشتہ سال طالبات پر اسلامی حجاب Rating:
You Are Here: Home » Urdu - اردو » اسلامی حجاب پر پابندی کی مخالفت کرنے والے ۸ شیعہ جوانوں کو ۶ سال قید کی سزا

اسلامی حجاب پر پابندی کی مخالفت کرنے والے ۸ شیعہ جوانوں کو ۶ سال قید کی سزا

اسلامی حجاب پر پابندی کی مخالفت کرنے والے ۸ شیعہ جوانوں کو ۶ سال قید کی سزا
جمہوریہ آذربائیجان کی راجدھانی باکو کی عدالت نے آج ان ۸ شیعہ جوانوں کو کال کوٹھری میں چھ سال تک بند کرنے کا فیصلہ سنایا جنہوں نے گزشتہ سال طالبات پر اسلامی حجاب کی پابندی کے خلاف صدائے اعتراض بلند کی تھی۔

اہلبیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔ جمہوریہ آذربائیجان کی راجدھانی باکو کی عدالت نے آج ان ۸ شیعہ جوانوں کو کال کوٹھری میں چھ سال تک بند کرنے کا فیصلہ سنایا جنہوں نے گزشتہ سال طالبات پر اسلامی حجاب کی پابندی کے خلاف صدائے اعتراض بلند کی تھی۔
باکو کی عدالت نے حکم صادر کیا ہے کہ ان آٹھ افراد میں سے ہر ایک کو ملکی قوانین کے خلاف احتجاج کرنے، شہر میں عوامی نظام کو تہ و بالا کرنے اور سیکیورٹی فورسز کے مقابلہ میں تشدد سے کام لینے کے جرم میں پانچ سے چھ سال تک جیل میں بند رکھنے کی سزا دی جاتی ہے۔
یہ آٹھ جوان حجاب پر پابندی کے خلاف ان ۴۰ اعتراض کرنے والوں میں سے ہیں جنہیں گزشتہ سال اکتوبر میں باکو سے گرفتار کیا گیا جن میں اکثریت شیعوں کی ہے۔
اس رپورٹ کے مطابق جمہوریہ آذربائیجان کے حکام، طالبات کے لیے بغیر حجاب کے کالج کی مخصوص یونیفارم پہننے کا قانون پاس کر کے اس ملک میں اس طرح کے اعتراضات کا سد باب کرنا چاہتے ہیں۔
قابل ذکر ہے کہ اس ملک میں ۷۰ فیصد آبادی شیعوں کی ہے اس کے باوجود اقلیت ان پر سوار ہے اور شیعوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جا رہا ہے۔

About The Author

Number of Entries : 6115

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.

© 2013

Scroll to top