امریکہ کے مقابلے میں ملت ایران کی مسلسل کامیابیاں Reviewed by Momizat on . رہبرانقلاب اسلامی حضرت آيت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے بدھ کے روز یونیورسٹیوں اور اسکولوں کے ہزاروں طلبا سے خطاب میں تیرہ آبان مطابق تین نومبر کے واقعات پر رہبرانقلاب اسلامی حضرت آيت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے بدھ کے روز یونیورسٹیوں اور اسکولوں کے ہزاروں طلبا سے خطاب میں تیرہ آبان مطابق تین نومبر کے واقعات پر Rating:
You Are Here: Home » Urdu - اردو » امریکہ کے مقابلے میں ملت ایران کی مسلسل کامیابیاں

امریکہ کے مقابلے میں ملت ایران کی مسلسل کامیابیاں

امریکہ کے مقابلے میں ملت ایران کی مسلسل کامیابیاں
رہبرانقلاب اسلامی حضرت آيت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے بدھ کے روز یونیورسٹیوں اور اسکولوں کے ہزاروں طلبا سے خطاب میں تیرہ آبان مطابق تین نومبر کے واقعات پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ واضح رہے تیرہ آبان مطابق تین نومبر کو مختلف برسوں میں مختلف واقعات پیش آئے تھے جن میں ایک واقعہ تہران میں امریکی سفارتخانے یا جاسوسی کے اڈے پر انقلابی طلباء کا قبضہ تھا۔ انقلابی طلباء نے امریکی جاسوسی کے اڈےپر قبضہ کرکے امریکی سفارتکاروں کو جوکہ ایران میں جاسوسی اور اسلامی انقلاب کے خلاف سازشوں میں مشغول تھے گرفتارکرلیا تھا۔ اس دن کو اسلامی انقلاب کی تاریخ میں ملت ایران نے سامراج سے مقابلے کے دن س موسوم کیا ہے۔ رہبرانقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے طلباء سے اپنے خطاب میں فرمایا کہ اس دن کے بارے میں جسے ہم سامراج سے مقابلے کا دن کہتے ہیں بہت کچھ کہنے کو باقی ہے۔ یہ صرف ایک تاریخی واقعہ نہیں تھا جسے ہم زندہ رکھنا چاہتے ہیں اور جس پر فخر کرتے ہیں بلکہ یہ دن بہت سے پیغامات کا حامل ہے۔ آپ نے فرمایا تیرہ آبان مطابق تین نومبر کو مختلف برسوں میں مختلف واقعات پیش آئے تھے جن میں انیس سو چونسٹھ میں امام خمینی قدس سرہ کا جلاوطن کیا جانا، اور انیس سو اٹہتر میں شاہی پٹھو حکومت کے ہاتھوں طلباء کا قتل عام اور انیس سو اناسی میں انقلابی طلباء کے ہاتھوں تہران میں امریکی سفارتخانے پرقبضہ تھا۔آپ نے فرمایا کہ ان تمام واقعات میں ایک طرف ملت ایران ہے اس کے ساتھ اسلامی انقلاب کے روح رواں حضرت امام خمینی ہیں اور ان کے مقابل امریکہ کی سامراجی حکومت ہے بنابریں اسلامی حکومت، اسلامی انقلاب اور ملت ایران امریکہ کی سامراجی حکومت کے سامنے ڈٹے ہوئے ہیں۔ آپ نے اپنے خطاب میں طلباء کو ملک کے حالات پر نظر رکھنے کی ھدایت دیتےہوئے کہا کہ یہاں دو بنیادی مسائل پائے جاتےہیں جن پر توجہ کرنے کی ضرورت ہے۔ پہلا مسئلہ یہ ہے کہ یہ جدوجہد کب سے شروع ہوئي ہے، کتنے مراحل سے گذری ہے اور اس کے نتیجے کیا نکلے اور کس کو کامیابی حاصل ہوئي ہے؟ رہبرانقلاب اسلامی نے انیس سو ترپن میں ڈاکٹر مصدق کی حکومت کے خلاف امریکہ کی فوجی بغاوت اور اس حکومت کو سرنگوں کرکے شاہ کوواپس لانے کی امریکی سازشوں کی طرف اشارہ فرمایا۔ اس کے بعد آپ نے انیس سو چونسٹھ کے قیام کی تفیصلات بیان کیں جس کے بعد امام خمینی قدس سرہ کو جلاوطن کردیا گيا تھا، اور آخر میں تحریک انقلاب اسلامی کی طرف اشارہ فرمایا جو انیس سو اناسی میں امام خمینی قدس سرہ کی قیادت میں کامیاب ہوئي تھی۔آپ نے فرمایا کہ ان تمام مرحلوں میں جو کہ پچیس برسوں پر محیط ہے امریکہ نے شاہ کی پٹھو حکومت کی حمایت کرکے ملت کے خلاف طرح طرح کی سازشیں کیں اور ہرقسم کا ستم ڈھایا لیکن کیا اسے کامیابی نصیب ہوئي؟ بعض موقعوں پر بظاہر اسے کامیابی ملی لیکن درحقیقت اگر غور کیاجائے تو یہ بھی اس کی شکست ہے۔ آپ نے فرمایا کہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کے فورا بعد امریکہ نے اسلامی انقلاب کے خلاف ہرممکنہ سازش اور اقدام کیا۔ امریکہ تہران میں اپنے سفارتخانے کے ذریعے جو کہ دراصل اس کا جاسوسی کا اڈا تھا ملت ایران اور اسکے اسلامی انقلاب کے خلاف بھرپور طرح سے میدان میں اتر آیا تھا لیکن تیرہ آبان مطابق تین نومبر انیس سو اناسی کو انقلابی طلباء نے جو ملت ایران کی جدوجہد میں فرنٹ لائن میں تھے امریکی سفارتخانے پرقبضہ کرلیا جس سے معلوم ہوتا ہےکہ امریکہ کو ایک بار پھر شکست فاش ہوئي۔ آپ نے فرمایا کہ اس کے بعد آج تینتیس برس ہوگئے امریکہ ملت ایران کے ہاتھوں مسلسل شکستیں کھاتا آرہا ہے۔ اسلامی انقلاب کے ہاتھوں امریکہ کی شکست دراصل سارے علاقے میں امریکہ کی شکست تھی آج ساری دنیا اس شکست کو دیکھ رہی ہے، مصر، تیونس، شمالی افریقہ اور عرب دنیا کے حالات سے واضح ہے کہ امریکہ کو بھر پور شکست ہوئي ہے۔ رہبرانقلاب اسلامی نے امریکہ کے خلاف ملت ایران کی طویل جدوجہد اور اس میں ملت ایران کی کامیابی اور امریکہ کی شکست کو نہایت ہی اہم قراردیا۔ آپ نے تاکید کی کہ اس مسئلے پر غور وفکر کرنے کی ضرورت ہے۔ آپ نے فرمایا امریکہ کے خلاف ملت ایران کی ساٹھ سالہ جدوجہد میں کامیابی کوئی معمولی بات نہیں ہے۔ آپ نے فرمایا کہ خدا پر توکل اور ایمان رکھنے والی ملت کی یہ کامیابی ساری قوموں کے لئے سبق اور نمونہ عمل ہے اور اس نے تاريخ میں ایک نیا فلسفہ قائم کیا ہے جو اسلامی اصولوں پراستوار ہے اور ساری قوموں نے اسے قبول کرلیا ہے جس سے واضح ہوجاتا ہے کہ ملت ایران امریکہ کے خلاف ہر مرحلے میں کامیاب رہی ہے اور آج بھی کامیاب ہے۔ اس کا انقلاب آج بھی باقی ہے اور روز بروز ترقی کررہا ہے آج بھی ملت ایران انقلاب کے آغاز کے دنوں کی طرح پرعزم اور ٹھوس ارادے کی حامل ہے

About The Author

Number of Entries : 6115

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.

© 2013

Scroll to top