اصحابِ رسولۖ حضرت حجربن عدی اور حضرت جعفرطیار کی قبور کی بے حرمتی کے خلاف احتجاج Reviewed by Momizat on . شیعہ علماء کونسل کراچی ڈویژن اور جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام قائدِ ملتِ جعفریہ حضرت آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کی اپیل پرشام اور اردن م شیعہ علماء کونسل کراچی ڈویژن اور جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام قائدِ ملتِ جعفریہ حضرت آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کی اپیل پرشام اور اردن م Rating:
You Are Here: Home » Urdu - اردو » اصحابِ رسولۖ حضرت حجربن عدی اور حضرت جعفرطیار کی قبور کی بے حرمتی کے خلاف احتجاج

اصحابِ رسولۖ حضرت حجربن عدی اور حضرت جعفرطیار کی قبور کی بے حرمتی کے خلاف احتجاج

اصحابِ رسولۖ حضرت حجربن عدی اور حضرت جعفرطیار کی قبور کی بے حرمتی کے خلاف احتجاج
شیعہ علماء کونسل کراچی ڈویژن اور جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کراچی ڈویژن کے زیر اہتمام قائدِ ملتِ جعفریہ حضرت آیت اللہ سید ساجد علی نقوی کی اپیل پرشام اور اردن میں اصحاب ِ رسول ۖ حضرت حجر بن عدی اور حضرت جعفرطیار کی قبور کی بے حرمتی اورمزارات مقدسہ کو منہدم کئے جانے کے خلاف کراچی شہر کی مختلف جامع مساجد کے باہر احتجاجی مظاہروں کا انعقاد کیا گیا۔ جبکہ مرکزی مظاہرہ جامع مسجد خوجہ اثنا عشری کھارا در کے باہر ہوا۔ شرکائے مظاہر ہ نے امریکی و اسرائیلی حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی اورامریکی پرچم نذر آتش کیا ۔ مظاہرین اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھائے ہوئے تھے جن پر اصحابِ رسول کی قبور کی بر حرمتی کے خلاف اورامریکہ و اسرائیل مردہ باد سمیت دیگر نعرے درج تھے۔مرکزی مظاہرے سے علامہ جعفر سبحانی ، مولانا رجب علی،مولانا حسن رضا رضوی،ناصر زیدی، ذیشان کاظمی ، مبشر مہدی اور احسان زیدی نے خطاب کیا۔ علامہ جعفر سبحانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ اردن اور شام میں اصحابِ رسول حضرتِ جعفرِ طیار اور حضرت حجر بن عدی کے روضہ ہائے مبارک کی بے حرمتی اور حضرت حجر بن عدی کی قبر کشائی ایک افسوس ناک اورقابلِ مذمت فعل ہے۔ لیکن افسوس آج امتِ مسلمہ اس عمل پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔اسلام کے نام پرکسی کو مقاماتِ مقدسہ کی بے حرمتی اور قتل و غارت گری کی کسی بھی مقام پر ہر گز اجازت نہیں دی جائے گی۔ جے ایس او کے مرکزی رہنما ذیشان حیدر کاظمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ مسلم ممالک اور بالخصوص عرب ممالک کے آپس کے اختلافات کے سبب امریکہ شام میں مسلسل مداخلت کر رہا ہے جس کے سبب اسرائیل مسلم ملک شام پر حملہ آور ہوا اور نوبت مقاماتِ مقدسہ کی بے حرمتی تک آن پہنچی ہے۔ مولانا رجب علی نے اپنے خطاب میں کہا کہ اب ضرورت اس امر کی ہے کہ عرب لیگ اور اوآئی سی اپنا ہنگامی اجلاس بلا کر شام کے مسئلے کے حل کے لیے ٹھوس اقدامات کرے تاکہ نواسی ء رسول حضرت زینب اور حضرت سکینہ بنت الحسین کے روضاہائے مقدسہ کی ممکنہ بے حرمتی سمیت وہاں پر جاری قتل غارت گری کو روکا جا سکے۔

About The Author

Number of Entries : 6115

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.

© 2013

Scroll to top